Background Image

ہمارى خيريں

مناسك حج كى شرح – ايك نيا تصور اورجديد انداز

مناسك حج كى شرح – ايك نيا تصور اورجديد انداز

3:25 ص الجمعة 5 ذو القعدة 1438 هـ

محترم جناب فضيلة الشيخ طلال بن أحمد العقيل مشير برائے وزير مذہبى أمور ، دعوت و ارشاد سعودى عرب نے أپنے ايك وضاحتى بيان ميں كہا كہ مناسك اكىڈمى كے منصوبہ كا تصور اصل ميں محترم المقام وزير برائے مذہبى أمور ، دعوت وارشاد جناب الشيخ صالح بن عبد العزيز بن محمد آل الشيخ  كى ان  تجاويز  واوامر كا تسلسل ہے  جو  وہ  ہميشہ وزارت كى ترقى  ، اور خصوصا   حجاج كى اگاہى كے پروگرامزكے بارہ ميں فرماتے رہتے ہيں ، اور پھر محترم المقام ، نائب وزير  جناب ڈاكٹر توفيق بن عبد العزيز السديرى نے  اس سوچ  كو عملى جامہ پہنانے كے ليئے خاص اہتمام كيا كہ ان كى طرف سے وقتًا فوقتًا  جديد ٹكنالوجى كے ذريعے معلومات نشر كرنے اور فاصلاتى نظام تعليم سے بھرپور افادہ  و استفاد  كى طرف خاص توجہ  دلائى جاتى رہى  ۔

مناسك اكىڈمى كى خدمات انہيں توجيہات كا تسلسل ہے كہ يہ أكيڈمى  سركارى اعداد وشمار كے مطابق أھم  ترين اور مشہور آٹھ زبانوں ميں اپنے پہلے ايڈيشن كے ساتھ منصہء ظہور پر آچكى ہے تاكہ اسلام كے پانچويں ركن (حج) كے احكام ومسائل اور  ان كے متعلق مستند  تعليمات، اور حجاج كرام كى راہنمائى كا منصوبہ ، جديد ٹكنالوجى كى وساطت سے دلكش اور نئے انداز  ميں  پيش كرنے اور  ان كو شرح وبسط سے بيان كرنے ميں ايك نماياں تعليمى ميدان كى حيثيت سے اپنا  اس طرح مقام ومرتبہ بنا سكے  كہ عازمين حج اور عمرہ كو سال كے چوبيس گھنٹے يہ سہولت ميسر رہے كہ دنيا كے ہر كونے ميں بسنے والا شخص جو حج يا عمرہ كے احكام ومسائل كے بارہ ميں اگاھى حاصل كرنا چاہے  وہ انٹرنيٹ كو بروئے كار لاتے ہوئے اپنے سمارٹ فون يا ليپ ٹاپ  يا  ٹيب وغيرہ كے  ذريعے اس اكىڈمى سے بھرپور فائدہ اٹھا سكے ۔

اس موقع پر شيخ عقيل نے ان تمام علماء  اور دعاة كا تہہ دل سے شكريہ ادا كيا جنہوں نے اس  عظيم كام ميں علمى مواد اور دروس كى شكل ميں اپنا بھرپور حصہ ڈالا اور يہ حضرات وہ چيدہ چيدہ اور چنيدہ علماء ہيں جو سعودى يونيورسٹيز سےعلوم شرعيہ ، عقيدہ اور فقہ ميں ڈگريوں كے حامل ہيں اور وزارت مذہبى امور كى زيرِ نگرانى دوسرے ممالك ميں تعليمى اور دعوتى سرگرميوں مصروف ہيں   جو اكيڈمك تعليم اور علومِ شرعيہ كے ماہر اساتذہ ہونے كے ساتھ ساتھ حاجيوں كى راہنمائى  كے فن ميں يدِ طولٰى  ركھتے ہيں ۔